ایم سی ڈی انتخابی نتائج کے پیش نظر کیجریوال حکومت برخاست ہو: کاٹجو

دھلی این سی آر

ایم سی ڈی انتخابی نتائج کے پیش نظر کیجریوال حکومت برخاست ہو: کاٹجو

نئی دہلی سپریم کورٹ کے سابق جج مارکنڈے کاٹجو نے کہا ہے کہ دہلی میونسپل کارپوریشنوں کے ( ایم سی ڈی) کے انتخابی نتائج کے پیش نظر صدر جمہوریہ کے پاس کے اس بات کا اختیار ہے کہ وہ کیجریوال حکومت کو برخاست کر دیں۔ جسٹس کاٹجو نے اپنے 'بلاگ' میں لکھا ہے کہ مقامی بلدیاتی انتخابات کے بعد صدر جمہوریہ کے پاس دہلی حکومت کو برخاست کرنے کا مناسب اختیار ہے اور وہ اسے برطرف کر کے اسمبلی الیکشن کا اعلان کرسکتے ہیں۔ اپنے بیانات کی وجہ سے اکثر سرخیوں میں رہنے والے سابق جج نے اپنی اس دلیل کو صحیح ٹھہرانے کیلئے سپریم کورٹ کے ایک فیصلے کا بھی حوالہ دیا ہے ۔ انہوں نے اسٹیٹ آف راجستھان بمقابلہ حکومت ہند، ایف آئی آر 1977 اے سی 1361 کیس کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس معاملے میں عدالت عظمی کے سات ججوں کی بنچ نے یہ فیصلہ دیا تھا کہ اگر کوئی پارٹی کسی الیکشن میں بری طرح شکست سے دوچارہو جاتی ہے تو اس کا مطلب یہ ہے کہ اب وہ پارٹی عوام کی خواہش کی نمائندگی نہیں کرتی اور لوگ اب مکمل طور پارٹی کے خلاف ہو گئے ہیں۔ اس سے یہ بھی واضح ہوتا ہے کہ عوام اور پارٹی کے درمیان دور ی پیدا ہوگئی ہے ۔ جسٹس کاٹجو نے کہا کہ جمہوریت میں عوام کی رائے سب سے اہم ہے اور ایسا مانا جاتا ہے کہ رکن اسمبلی عوام کی رائے کی نمائندگی کرتے ہیں ۔ چنانچہ بعد کے کسی بھی الیکشن میں پارٹی کی مکمل طور پر شکست کا مطلب ہے کہ اب وہ لوگوں کی خواہش کی نمائندگی نہیں کرتی ہے ، اس لئے ایسی حکومت کو صدر جمہوریہ آئین کے آرٹیکل 356 کے تحت برخاست کرکے نئے سرے سے انتخابات کروا سکتے ہیں۔ سابق جج نے یہ بھی واضح کیا ہے کہ اس مقدمے کے حقائق اور مسائل مختلف تھے ۔ تاہم ، انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کی طرف سے اس معاملے میں دیا گیا فیصلہ دہلی کے معاملے میں بھی اطلاق ہوتا ہے ۔میونسپل کارپوریشن کے انتخابات کے نتائج کے بعد یہ واضح ہو گیا ہے کہ عام آدمی پارٹی کی حکومت اب دہلی کے عوام کی خواہش کی نمائندگی نہیں کرتی ہے ۔ واضح ر ہے کہ بدھ کو دہلی کے تینوں کارپوریشنوں کے انتخابات کے نتائج سے عام آدمی پارٹی کو زبردست جھٹکا لگا ہے اور اس کے 40 امیدوار تو اپنی ضمانت بھی نہیں بچا پائے ہیں۔ تینوں کارپوریشنوں پر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) ہیٹ ٹرک لگانے میں کامیاب رہی ہے ۔ کل 270 وارڈوں کے انتخابات کے نتائج میں سے 181 پر بی جے پی کے امیدوار فاتح ہوئے ہیں جبکہ عاپ کو صرف 48 سیٹوں پر ہی کامیابی ملی۔ 27سیٹیں کانگریس کو ملی ہیں۔

Similar Posts

Share it
Top