کیجریوال نےبالآخر خاموشی توڑی، قبول کی غلطی

بھارت

کیجریوال نےبالآخر  خاموشی توڑی،  قبول  کی غلطی

نئی دہلی، پنجاب اور گوا اسمبلی انتخابات کے بعد دہلی میونسپل کارپوریشن انتخابات میں عام آدمی پارٹی (آپ) کو ملی شکست کے بعد پارٹی میں ہرطرف سے ہونے والی نکتہ چینی پر وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج چار دن بعد خاموشی توڑتے ہوئے غلطی تسلیم کی ہے۔
ابھی تک الیكٹرانك ووٹنگ مشین (ای وی ایم) کو شکست کا سبب بتانے والے مسٹر کیجریوال نے کہا "میری گزشتہ دو دن کے دوران كئی پارٹی رضاکاروں اور ووٹروں سے بات چیت ہوئی ہے اور حقیقت کا پتہ چلا ہے۔ سچائی یہ ہے کہ ہم نے غلطیاں کی ہیں اور ہم ان پر خود غوروخوض کر کے اسے دورکرنے کی کوشش کریں گے۔ "
مسٹر کیجریوال نے آج صبح ٹوئٹ کرکے کہا "وقت آ گیا ہے کہ ہم اپنی غلطیوں کو تسلیم کریں اور انہیں ٹھیک کرنے کی کوشش کریں۔ یہ کرنا ضروری ہے اور ہمیں غور خوض کرنا ہوگا، بہانے بنانے کا وقت نهيں ہے۔ اب کارروائی کرنے کی ضرورت ہے اور ہمیں پھر سے اپنے کام میں لگ جانا ہو گا۔ "
پارٹی کنوینر نے کہا "ہم وقتا فوقتا پھسلے لیکن اہم بات یہ ہوگی کہ ہم خود کو پہچانیں اور پھر سے کھڑے هوكر واپسی کریں۔"

وزیر اعلی نے کہا "اس شکست سے ان کی حکومت کے کام کاج پر کوئی اثر نہیں پڑے گا اور پارٹی تبدیلی کے راستے پر آگے بڑھتی رہے گی اور دہلی کے عوام کو وہ سب دینے کی کوشش کرے گی جس کے وہ مستحق ہیں۔"
واضح رہے کہ 26 اپریل کو کارپوریشن انتخابات میں پارٹی کو ملی شکست کے بعد پارٹی میں ہر طرف سے نکتہ چینی ہورہی ہے ۔ کل پارٹی کے اہم لیڈر اور بانی ارکان میں سے ایک کمار وشواس نے گزشتہ سال مرکزی حکومت کی سرجیکل اسٹرائک اور نوٹوں کی منسوخی کے فیصلوں پر پارٹی کے بیانات پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا تھا "ہمیں عوام نے شکست دی ہے ای وی ایم نے نہیں۔"
اس سے پہلے بھی پارٹی کے کئی لیڈر انتخابات میں ہوئی شکست پر اپنی ناراضگی ظاہر کر چکے ہیں۔ راجدھانی دہلی میں کارپوریشن انتخابات میں عام آدمی پارٹی کو صرف 48 سیٹیں ملی ہیں جبکہ بھارتیہ جنتا پارٹی کو 181 سیٹیں حاصل ہوئی ہیں۔

Similar Posts

Share it
Top