کشمیر: مزدوروں کے عالمی دن کے پیش نظر 'کاروان امن' بس سروس معطل

بھارت

سری نگر ، دنیا بھر میں یکم مئی کو منائے جانے والے 'مزدوروں کے عالمی دن' کے پیش نظر گرمائی دارالحکومت سری نگر اور پاکستان زیر قبضہ کشمیر کی دارالحکومت مظفرآباد کے درمیان چل رہی ہفتہ وار 'کاروان امن'بس کو پیر کے روز معطل کیا گیا ۔
سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا 'ہمیں مظفر آباد سے ایک پیغام موصول ہوا جس میں بتایا گیا کہ وہاں یوم مئی کو مزدوروں کے عالمی دن کے موقع پر عام تعطیل ہوتی ہے اور اس کے پیش نظر کاروان امن بس کو آج معطل کیا جائے'۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں طرف کی انتظامیہ نے باہمی اتفاق رائے کے بعد بس سروس کو آج معطل رکھنے کا فیصلہ لیا ہے۔
سرکاری ذرائع نے بتایا کہ جو مسافر آج اس ہفتہ واری بس سروس کے ذریعے سفر کرنے والے تھے، کو بس کی معطلی کے فیصلے سے آگاہ کیا گیا ہے۔ 1999 ء میں کرگل کی جنگ کے بعد ہندوستان اور پاکستان کے درمیان بڑے اعتماد سازی کے اقدام کے طور پر شروع کی گئی یہ بس سروس وادی میں سال 2008 ء، 2010 ء اور 2016 ء کی طویل احتجاجی تحاریکوں اور لائن آف کنٹرول پر کشیدگی کے باوجود جاری رہی۔ کاروان امن بس کا آغاز 7 اپریل 2005 کو ہوا تھا اور تب سے اِس کے ذریعے ہزاروں لوگ آرپار اپنے عزیز واقارب سے ملے ہیں۔

Similar Posts

Share it
Top