کرشنا گھاٹی واقعہ میں پاکستانی فوج کے ہاتھ ہونے کا ہندوستان کے پاس وافر ثبوت

بھارت

نئی دہلی' ہندوستان نے آج کہا ہے کہ اس کے پاس اس بات کے وافر ثبوت موجود ہیں کہ جموں و کشمیر کے کرشنا گھاٹی سیکٹر میں ہندوستانی جوان کے قتل اور اس کی لاش مسخ کرنے میں پاکستانی فوج ملوث تھی۔
وزارت خارجہ کے ترجمان گوپال باگلے نے یہاں معمول کی بریفنگ میں سوالوں کے جواب میں کہا کہ شہید ہندوستانی جوانوں کے خون کے نشانات کنٹرول لائن تک گئے ہیں اور روجا نالا کے پاس خون کے نشان سے صاف ظاہر ہے کہ قتل کرنے موالے پاکستان کے قبضے والے علاقے میں لوٹے ہیں۔
مسٹر باگلے نے کہا کہ پاکستان کے ہائی کمشنر عبدالباسط کو خارجہ سکریٹری ایس جے شنکر نے طلب کیا تھا اور انہیں ہندوستانی جوانوں کی پاکستانی فوج کے سپاہیوں کے ذریعہ قتل اور مسخ کرنے کے سلسلے میں ہندوستان کے غصے کو ظاہر کیا کیا اور کہا کہ یہ حرکت انسانیت کے کسی بھی پیمانے کے مطابق نہیں ہے۔ او ریہ انتہائی اشتعال انگیز کارروائی ہے۔ ہندوستان نے مطالبہ کیا کہ پاکستان اس واقعہ کے لئے ذمہ دار فوج کے افسران اور کمانڈروں کے خلاف کارروائی کرے۔
انہوں نے بتایا کہ خارجہ سکریٹری نے پاکستانی ہائی کمشنر کو واضح طور پر بتایا کہ اس واقعہ میں پاکستانی فوج کے افراد شامل تھے اور ہندوستان کے پاس اس بات کے وافر ثبوت موجود ہیں۔ حالانکہ مسٹر باس۔ نے پاکستانی فوج کے رول سے صاف انکار کیا ۔ انہوں نے کہا کہ وہ حکومت ہند کے جذبات اسلام آباد میں اپنی حکومت تک پہنچادیں گے۔

Similar Posts

Share it
Top