اطلاعاتی ٹیکنالوجی اور الیکٹرونکس کے شعبے میں ہند 150بنگلہ دیش تعاون کے لیے مفاہمتی عرضداشت پر دستخط

بھارت

نئی دہلی ، مرکزی کابینہ کو وزیر اعظم نریندر مودی ی قیاد ت میں منعقدہ میٹنگ میں اس مفاہمت عرضداشت کی جانکاری دی گئی ، جس پر ہندوستان اور بنگلہ دیش کے مابین پہلے ہی دستخط ہوچکے ہیں اور اس کا تعلق اطلاعاتی ٹیکنالوجی اور الیکٹرونکس کے شعبے میں ہند 150 بنگلہ دیش کے مابین تعاون کو فروغ دینے سے ہے۔
واضح رہے کہ مذکورہ مفاہمتی عرضداشت پر حکومت ہند کے تحت الیٹرونکس اور اطلاعاتی ٹیکنالوجی کی وزارت اور بنگلہ دیش کی اطلاعاتی اور مواصلاتی ٹیکنالوجی کے ڈویزن کے مابین اپریل 2017 میں دستخط عمل میں آئے تھے۔ یہ معاہدہ دو برسوں تک نافذ العمل رہے گا۔
بعدازاں اس مفاہمتی عرضداشت کو باہمی اتفاق رائے سے طرفین کی تحریری منظوری کے ذریعے توسیع دی جاسکتی ہے۔ طرفین کو یہ حق بھی حاصل ہوگا کہ وہ چھ مہینے کی پیشگی نوٹس دے کر اس معاہدے کو منسوخ بھی کرسکتے ہیں۔
مذکورہ مفاہمتی عرضداشت اپنی نوعیت کے لحاظ سے آئی ٹی اینڈ ٹی کے شعبے کی تکنیکی مفاہمتی عرضداشت ہے اور اس کے تحت بنیادی طور پر ای حکمرانی، کم سے کم حکمرانی، ای پبلک سروس ڈلیوری، سائبر سلامتی، سلامتی کا انتظام کرنے وغیرہ سے ہے۔
اس مفاہمتی عرضداشت کا مقصد یہ ہے کہ ہندوستانی آئی ٹی کمپنیوں کے ذریعے بنگلہ دیش کی آئی ٹی اینڈ ٹی مارکیٹ میں مواقع کی تلاش کی جائے اور بھارتی الیکٹرونکس میں سرمایہ کاری کو اطلاعاتی ٹیکنالوجی کے شعبے میں راغب کیا جائے۔ اس کے ذریعے بالواسطہ طور پر روزگار کے مواقع بھی فراہم ہوں گے۔

Similar Posts

Share it
Top